جموں کشمیر میں امن و سلامتی کا نیا دور فورسز ، پولیس اور فوجی اہلکاروں کی قربانیوں کا نتیجہ/امت شاہ

سرینگر/شہر بین ٹائمز/وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا کہ وزیر اعظم کی قیادت میں اگلے تین برسوں میں جموں کشمیر سمیت دیگر مشرقی ریاستوں کو ’’دہشت گردی‘‘ اور نکسلواد سے نجات دلائی جائے گی ۔ وزیر داخلہ نے کہاکہ وادی کشمیر میں جو آج امن و سلامتی کا دور دورہ ہے وہ فوج ، پولیس اور فورسز جوانوں کی قربانیوں کانتیجہ ہے ۔ امت شاہ نے بتایا کہ کشمیر سے لیکر مشرقی ریاستوں تک ایسا ماحول قائم کیا جائے گا جس میں ہر ایک شہری اپنے آف کو محفوظ محسوس کرے گا ۔ سشاترا سیما بل کے 60ویں یوم تاسیس کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے وزیر داخلہ نے کہا کہ 2019میںجو فیصلہ سرکار نے جموں کشمیر کے حوالے سے لیا تھاوہ آج درست ثابت ہوا ہے کیوں کہ جموں کشمیر میں ملٹنسی کا گراف برابر نیچے آرہا ہے اور یہی بڑی کامیابی ہے ۔ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے ہفتہ کو کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں ملک اگلے تین سالوں میں ’’دہشت گردی ‘‘اور نکسل ازم کے مسئلہ سے صد فیصد آزاد ہو جائے گا۔شاہ نے ہفتہ کو آسام کے تیز پور میں ساشترا سیما بل کے 60ویں یوم تاسیس کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہاکہ جموں کشمیر میں جو آج امن و سلامتی اور ترقی کا دور دورہ ہے وہ ہمارے فوجی اہلکاروں ، فورسز جوانوں اور پولیس عملہ کی قربانیوں کا نتیجہ ہے جنہوںنے ملک کی سلامتی کیلئے اپنی جانوں کی قربانیاں دی ہیں ۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت میں اگلے تین سالوں میںملک کو’’ٹرازم‘‘ نکسل ازم کے مسئلے سے مکمل طور پر چھٹکارا مل جائے گا۔’’دہشت گردی ‘‘ اورنکسلزم کے خلاف لڑائی میں ایس ایس بی کی بہادری کی ستائش کرتے ہوئے امیت شاہ نے کہا کہ سی آر پی ایف اور بی ایس ایف کے ساتھ مل کر ایس ایس بی نے نکسل تحریک کو ایک کنارے پر پہنچا دیا ہے۔انہوںنے بتایا کہ ’’نیپال اور بھوٹان جیسے دوست ممالک کی سرحد کی حفاظت کے ساتھ ساتھ ایس ایس بی نے چھتیس گڑھ، جھارکھنڈ اور بہار میں نکسلیوں کے خلاف جنگ لڑی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں