شوہر کے بڑے بھائی سے جنسی تعلقات بنانے کیلئے مجبور کیا گیا تو خاتون نے اٹھالیا یہ بڑا قدم

راجستھان کے سرحدی باڑمیر علاقہ میں ایک خاتون کے جنسی استحصال کا ایک حیران کرنے والا معاملہ سامنے آیا ہے ۔ خاتون نے الزام لگایا ہے کہ اس کے شوہر کا بڑا بھائی اس کا جنسی استحصال کرتا ہے ۔ خاتون کے مطابق وہ اپنے شوہر کی مرضی سے اپنے دیور کے ساتھ گزشتہ بارہ سالوں سے رہ رہی ہے ۔ خاتون کے مطابق اس کے اپنے دیور کے ساتھ جسمانی تعلقات ہیں ، لیکن شوہر کا بڑا بھائی اس کے ساتھ زبردستی کررہا ہے ۔

اپنی فریاد لے کر ایس پی آفس پہنچی خاتون پھوٹ پھوٹ کر رونے لگی ۔ یہ دیکھ کر وہاں تعینات پولیس اہلکاروں کو کچھ سمجھ میں نہیں آیا ۔ انہوں نے خاتون سے بات کی تو اس نے اپنی آب بیتی سنائی ۔ باڑمیر کے گڈرار علاقہ کی رہنے والی خاتون کے مطابق اس کو اس کے شوہر کا بڑا بھائی اور سسرال کے دیگر لوگ کافی پریشان کرتے ہیں ۔
ملزم جیٹھ ہمیشہ اس پر ظلم کرتا ہے ۔ یہاں تک کہ وہ خاتون کو کمرے میں بند کر کے کئی مرتبہ اس کی آبروریزی بھی کرچکا ہے ۔ متاثرہ نے بتایا کہ اس نے خاتون تھانہ میں گزشتہ دو ستمبر کو شکایت درج کروائی تھی ، لیکن ملزمین کے خلاف ابھی تک کوئی کارروائی نہیں ہوئی ہے ۔ متاثرہ کا کہنا ہے کہ وہ اپنے شوہر کے بڑے بھائی اور دیگر لوگوں کے ظلم وستم سے پریشان ہوچکی ہے اور انصاف نہ ملنے پر خودکشی جیسا انتہائی قدم اٹھا سکتی ہے ۔
اتون نے بتایا کہ اس کی شادی بارہ سال پہلے ہوئی تھی اور وہ اپنے شوہر کی مرضی سے اپنے دیور کے ساتھ رہ رہی ہے ۔ دیور کے ساتھ اس کے تعلقات کو دیکھ کر شوہر کے بڑے بھائی کی نیت خراب ہوگئی اور وہ اس کے ساتھ ناجائز تعلقات بنانا چاہتا ہے ۔ وہیں اس معاملہ پر ایس پی کا کہنا ہے کہ معاملہ کی جانچ کی جارہی ہے اور جلد ہی ملزمین کو گرفتار کرلیا جائے گا ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں